اظہر مشتاق

پاکستانی  اور بھارتی زیرِ انتظام کشمیر کے درمیان  تقریباً  740 کلومیٹر  پر پھیلی ایک ایسی پٹی موجود ہے جسے  پہلے دونوں ممالک نے جنگ بندی کی لکیر  کا نام دیا اور بعد میں اسے لائن آف کنٹرول کا۔ اگر یوں کہیے کہ  پاکستان اور بھارت  کے درمیان  740 کلو میٹر لمبی اور6 کلومیٹر چوڑی ایک ایسی پٹی  موجود ہے جس کے قریب دونوں طرف آباد لوگ   ہر وقت ایک غیر یقینی صورتحال کا شکار رہتے ہیں تو غلط نہ ہوگا۔  پاکستان بھارت کے درمیان سفارتی تعلقات کی خرابی ہو یا   دونوں اطراف  کسی  بھی طرح کی  عسکری کاروائی ، اگر پاکستان کی طرف سے بلوچستان یا افغان سرحد پر ہونے والی کسی بھی دہشت گردی کا ملبہ بھارت پر ڈال دیا جائے تو سمجھ لیجئے کہ تاؤ بٹ سے لیکر  بھمبر تک  توپوں کے منہ کھلنے کو ہیں، اسی طرح اگر بھارتی زیر انتظام کشمیر کے اندر بھارتی فوج پر حملے یا کسی دہشت گرد کاروائی کی خبر آئے تو  جنگ بندی کی لکیر کی اطراف میں بسنے والے لوگ  چو کنے ہو جاتے ہیں اور نفسیاتی طور پر اپنے آپ کو کسی  بھی طرح کی غیر یقینی صورت حال کے لئے تیار کر لیتے ہیں۔ اگر یہ کہا جائے کہ دونوں طرف کی افواج اپنا سارا غصہ نکالنے کے لئے جس خطے کو سب سے زیادہ نشانہ بناتی ہیں  وہ جنگ بندی کی لکیر سے ملحقہ علاقے ہیں۔

پاکستانی زیرِ انتظام کشمیر کے جنگ بندی کی لکیر سے متصل علاقوں کے مکین     جہاں بھاری گولہ باری  زیرِ اثر مال مویشی، املاک، فصلوں کی تباہی اور انسانی  جانوں کے ضیاع کے صدمے سے سے دوچار ہوتے ہیں وہیں، بنیادی  ڈھانچے ، صحت عامہ کی سہولیات، رابطہ کاری کی سہولیات سمیت دیگر بنیادی ضروریات کی عدم دستیابی کی وجہ سے ذہنی اور نفسیاتی ہیجان کی کیفیت میں مبتلا ہیں۔  یہ کوئی مبالغہ آرائی نہیں کہ جنگ بندی کی لکیر کی نزدیکی آبادیاں پسماندگی میں اپنا ثانی نہیں رکھتیں۔  جنگ بندی کی لکیر سے ملحقہ آبادی میں آگر کوئی انسان زخمی ہو جائے تو اسے مناسب اسپتال تک پہنچانے کے لئے پہاڑی اور دشوار گزار راستوں سے کم از کم  پچاس کلومیٹر کا سفر طے کرنا پڑتا ہے۔ غیر معیاری اور ناہموار سڑکوں پر صرف پچاس کلومیٹر کا  فاصلہ طے کرنے کے لئے   ڈیڑھ سے دو گھنٹے تک کا وقت درکار ہوتا ہے۔  کئی مرتبہ ایسا بھی ہوا ہیکہ مخالف سمت سے آنے والی گولی  کا نشانہ بننے والا ایک انسان جب زخمی ہوا تو  ایمبولینس کی عدم موجودگی یا مناسب ابتدائی طبی امداد کے نہ ملنے کی وجہ سےاسپتال پہنچنے سے پہلے ہی راہِ عدم کو روانہ ہوگیا۔

8 اگست 2017  کو  ضلع پونچھ کے بٹل /مدارپور سیکٹر میں جنگ بندی کی لکیر پر ہونے والی غیر معمولی نقل و حرکت یا سر گرمی کے نتیجے میں دونوں طرف کی توپوں نے آگ اگلنا  شروع کی تو بھارتی توپوں نے براہِ راست ایک گاؤں کے عام شہریوں کو نشانہ بنانا شروع کیا ، وہ گاؤں بھارتی چوکیوں کے اتنا قریب ہیکہ چھوٹے ہتھیاروں سے بھی عام انسان کو  نشانہ بنانا کوئی مشکل کام نہیں،  دیکھتے دیکھتے پورا گاؤں   پاس کے قصبے میں نقل مکانی کر گیا، مقامی کسان جن کے گھریلو اخراجا ت کا انحصار صرف زراعت پر تھا ، اپنی کھڑی فصلوں کو حسرت بھری نظروں سے دیکھتے رہے مگر ان کی کٹائی  کر کے اناج کو ذخیرہ نہیں کر سکے۔

ستایئس سالہ سرفراز امتیاز بھی جنگ بندی کی لکیر کے ملحقہ ایک گاؤں کا باسی تھا،   جس کا گاؤں جنگ بندی کی لکیر سے اتنا دور ہیکہ قریب کی چوکیوں پر بیٹھے بھارتی فوجی سرفراز کے گاؤں کے افراد کی نقل وحرکت کا آسانی سے لگا سکتے ہیں۔ سرفراز اپنے  گاؤں اور ساتھ والے گاؤں سے سکول کے بچوں کو سکول چھوڑتا اور واپس گھر لاتا تھا۔   15 فروری کی دوپہر کو سرفراز سکول کی بچیوں کو چھوڑنے جا رہا تھا کہ سب سے  قریبی بھارتی چوکی سے صرف ایک فائر ہوا جو غالباً کسی سنائپر سے کیا گیا تھا ، گولی سرفراز کے گلے میں لگی اور سانسوں کے تواتر میں حائل ہوگئی،  وین میں بیٹھی   دو طالبات حادثے کے بعد بھی محفو ظ رہیں ۔

جب میں اپنے  سارے اوسان اور کافی غور و فکر کے بعد مناسب الفاظ کا چناؤ کر کے سرفراز کے والد کے پاس پہنچا تو  فرط غم سے نڈھال ایک ناتواں شخص جو کبھی سرفراز اور اسکے بہن بھائیوں کا ہیرو رہا ہوگا سے صرف اتنا کہہ پایا  کہ ہم سب آپ کے بیٹے ہیں۔ کاش میں اس سے زیادہ مناسب الفاظ کر پاتا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!!!گھر میں تعزیت کے لئے بیٹھے تمام افراد کے چہروں پر ایک سوال تھا، ایسا لگ رہا تھا کہ ابھی کہیں سے آواز آئیگی ، “ہمارا قصور کیا ہے؟” بوڑھا باپ تمام چہروں کو یوں ٹکٹکی باندھے دیکھ رہا تھا جیسے تمام چہروں میں سے سرفراز کو ڈھونڈ رہا ہو۔اور میرے یقین دلانے کے باوجود مجھ سے کہہ رہا ہو کہ نہیں تم میرے سرفراز نہیں۔شاید تما م  والدین  اپنی اولادوں  سے خودغرضی کی حد تک محبت کرتے ہیں اور دنیا کے تمام دانشوروں کی لفاظی ان کے دکھوں پر مرہم رکھنے سے قاصر ہے۔ سرفراز کے والد شاید اسکی تین ماہ کی بیٹی اور جوان بیوہ کے دکھوں کو لیکر شاید زیادہ متفکر تھے۔

جموں کشمیر کی حد بندی لائن کے دونوں طرف شاید ایک سی کہانیاں سننے کو ملیں گی ، کہیں باپ بیٹے کے جنازے کو کندھا دیکر منوں مٹی تلے دباتا ہے تو کہیں  کوئی بیٹا پیدائش سے پہلے ہی باپ کے سائے سے محروم ہو جاتا ہے۔  یہی نہیں بلکہ کبھی کبھی ایک دوسرے پر گولے داغنے والے کسی فوجی کی لاش  جب مدھیا پردیش، ناگالینڈ، راجھستان، ہماچل پردیش، کلکتہ ،  دلی ، سندھ، پنجاب ، بلوچستان یا خیبر پختونخواہ کے کسی شہر، قصبے یا گاؤں میں پہنچتی ہے تو اسکا خاندان بھی بالکل ویسے ہی نالہ و شیون بلند کرتا ہو گا جس طرح حد بندی  کی لکیر پر گولی سے مرنے والے کے لواحقین کرتے ہیں۔

جموں کشمیر کے لوگوں کا مقدمہ جسے اقوام متحدہ  کی قراردادوں میں تسلیم  کیا گیا ہے اور فریقین نے  مسئلے کو حل کرنے کی یقین دھانی کا عندیہ بھی دیا ہے  تو   فائر بندی کی  لکیر پر آگ  و خون کا کھیل کھیلنے کا مقصد سمجھ سے بالاتر ہے۔ ستم ظریفی یہ ہیکہ پاکستانی زیر انتظام جموں کشمیر ، پاکستانی حکومت اور انتظامیہ گولہ باری کے متاثرین کے لئے  خاطر خواہ انتظامات کرنے سے عاری ہے۔  زخمیوں کی مرہم پٹی کے لئے مناسب انتظام بھی نہ ہونے کے برابرہے۔ اگر متاثرین سفید پرچم لیکر احتجاج کے لئے نکلیں تو الٹا انتظامیہ احتجاج نہ کرنے کے لئے دباؤ ڈالتی ہے اور احتجاج کے منتظم نوجوانوں کو مختلف ہتھکنڈوں سے دبانے کی کوشش کی جاتی ہے۔ لاشیں اور زخمی اٹھانے کا سلسلہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا۔ لیکن اب جنگ بندی کی لکیر پر بسنے والے عوام تمام قبائلی ، سیاسی اور سماجی تفرقات کو مٹا کر یک نکاتی ایجنڈے پر متفق ہونے کے لئے کوشاں ہیں، ضلع پونچھ ، کوٹلی اور نیلم میں اسی ایجنڈے کو مدنظر رکھتے ہوئے  جنگ  بندی کی لکیر کے ساتھ ساتھ امن مارچ بھی کئے گئے ہیں۔جنگ بندی کی لکیر سے متصل آبادیوں میں بسنے والے عوام کا صرف ایک ہی مطالبہ ہے  کہ پاکستانی اور بھارتی افواج مستقل فائر بندی کے اپنے کئے ہوئے معائدے پر عمل پیرا ہوں اور مسئلہ کشمیر کو سیاسی حل کی طرف لے جانے کی کوشش کی جائے ، مسئلہ کشمیر کے سیاسی حل سے نہ صرف ریاست جموں کشمیر کے باشندے ایک نفسیاتی کشمکش سے چھٹکارہ حاصل کریں گے بلکہ اس مسئلے کی بنیاد پرپاکستان اور بھارت کا مختص  دفاعی بجٹ، دونوں ممالک کے عام انسانوں کی ترقی اور نظامِ زندگی کو بہتر بنانے کیلئے خرچ ہوگا اور ایک پر امن جنوبی ایشیاء کا خواب شرمندہِ تعبیر ہو سکے گا۔

4972 COMMENTS

  1. Nice blog! Is your theme custom made or did you download it from somewhere?
    A design like yours with a few simple adjustements would really make my blog stand out.
    Please let me know where you got your design. Cheers

  2. I have learn several good stuff here. Definitely price bookmarking
    for revisiting. I wonder how much attempt you put to create this kind
    of magnificent informative site.

  3. Nice post. I was checking continuously this blog and
    I’m impressed! Extremely useful information particularly
    the last part 🙂 I care for such info much. I was seeking this certain information for a
    very long time. Thank you and best of luck.

  4. Pretty section of content. I just stumbled upon your web site and
    in accession capital to assert that I get actually enjoyed account your blog posts.
    Any way I will be subscribing to your augment and even I achievement you
    access consistently rapidly.

  5. Hey! This is my first comment here so I just wanted to give a
    quick shout out and tell you I genuinely enjoy reading
    your blog posts. Can you recommend any other blogs/websites/forums that go over the same topics?
    Thanks for your time!

  6. Magnificent beat ! I wish to apprentice while you amend your web site, how can i
    subscribe for a blog website? The account helped me a applicable deal.
    I have been tiny bit familiar of this your broadcast provided vibrant clear concept

  7. I was extremely pleased to find this page. I wanted to thank you for ones time for this fantastic read!! I definitely really liked every part of it and i also have you bookmarked to check out new things in your blog.|

  8. Fantastic goods from you, man. I’ve understand your stuff previous to and you are just too excellent. I really like what you have acquired here, really like what you’re stating and the way in which you say it. You make it entertaining and you still take care of to keep it smart. I cant wait to read far more from you. This is actually a wonderful website.|

  9. Good day! I could have sworn I’ve been to this web
    site before but after browsing through some of the articles I realized it’s new to me.
    Nonetheless, I’m definitely pleased I found it
    and I’ll be bookmarking it and checking back regularly!

  10. zithromax without a doctor prescription is fantastic. I’m happy I can dial anytime with questions. Every one is pleasant to parcel out with. I ardour the delivery repair they provide. I’m impressionable to so many medicines, so they welcome me recognize if there are any changes with peculiar generic downer manufacturers. Amy has fall upon up all my prescriptions to be filled together so I don’t secure to make subsidiary trips to the pharmacy.

  11. Excellent beat ! I wish to apprentice while you amend your web site, how can i subscribe for a blog website?
    The account helped me a acceptable deal. I had been tiny bit acquainted of this your broadcast provided
    bright clear concept

  12. [url=http://sildenafilcitrate1.com/]sildenafil generic mexico[/url] [url=http://tadalafiloralpills.com/]best price tadalafil online canada[/url] [url=http://cleocin.today/]cleocin 75 mg[/url] [url=http://viagragenericorder.com/]viagra 2019[/url] [url=http://viagraptabs.com/]online viagra pharmacy[/url] [url=http://valtrex.monster/]online drugs valtrex[/url] [url=http://phenergan.monster/]phenergan 25g[/url] [url=http://cialisrtabs.com/]cialis tablets for sale uk[/url] [url=http://cialismtabs.com/]buy cialis 2.5 mg online[/url] [url=http://viagragenericmedication.com/]can i order viagra from canada[/url]

  13. Greetings! Quick question that’s entirely off topic.
    Do you know how to make your site mobile friendly?

    My weblog looks weird when browsing from my apple iphone.
    I’m trying to find a template or plugin that might be able to resolve this problem.

    If you have any suggestions, please share. Thanks!

  14. of course like your web site however you need to take a look at the spelling on quite a few of your posts.
    A number of them are rife with spelling problems and I find it very bothersome to tell the truth nevertheless I will
    surely come again again.

  15. My family moved to Cloverdale from Vancouver 23 years ago , and we have been with pharmasave from the start. I don’t be acquainted with what we would do if we ever had to progress again , cloverdale pharmasave is like kinsmen , always there when we emergency you In the gone and forgotten 5 years our sons dog ( Keeda ) has had a terribly unfortunate click in her hips that was causing her lots of pang, but with the nick of the employees she these days gets glucosamine diurnal and she feels superior in behalf of it. Thanks http://www.hfaventolin.com.
    You suggested it effectively.

  16. From one end to the other of my 37 years in this production, I’ve conditions dealt with a circle that knows customer advice like can hydroxychloroquine be purchased over the counter of Minnesota. When we transitioned to Guardian, our unalloyed nursing organization promptly jumped on gaming-table after experiencing the added-level of forgiving aegis from the pharmaceutics’s integrated services. During partnering with Insigne and his troupe, we recall that we are doing the master over the extent of our patients and residents.
    You mentioned this very well.

  17. I simply couldn’t leave your web site prior to suggesting that I
    really enjoyed the usual information an individual provide on your guests?
    Is gonna be again ceaselessly to investigate cross-check new posts

  18. It is appropriate time to make some plans for the long run and it’s time to be happy.
    I have read this post and if I could I want to counsel you few attention-grabbing things or tips.
    Perhaps you can write subsequent articles referring to this
    article. I want to read more things about it!

  19. I was curious if you ever thought of changing
    the structure of your website? Its very well written;
    I love what youve got to say. But maybe you could a little more in the way of content so people could connect with it better.
    Youve got an awful lot of text for only having
    one or 2 pictures. Maybe you could space it out
    better? http://metal-firms.in.ua/wr_board/tools.php?event=profile&pname=faruvoda

  20. Woah! I’m really loving the template/theme of this website.
    It’s simple, yet effective. A lot of times it’s
    challenging to get that “perfect balance” between user
    friendliness and appearance. I must say you have done a fantastic job with this.
    Additionally, the blog loads extremely quick for me on Internet explorer.
    Excellent Blog! http://optstroysnab.ru/index.php?subaction=userinfo&user=jemibe

  21. Today, I went to the beachfront with my children. I
    found a sea shell and gave it to my 4 year old daughter and said
    “You can hear the ocean if you put this to your ear.” She
    put the shell to her ear and screamed. There was a hermit crab inside and it pinched her ear.
    She never wants to go back! LoL I know this is completely off topic but I had to tell someone!
    http://dclab.skku.ac.kr/xe/index.php?act=dispBoardWrite

  22. Today, I went to the beachfront with my children. I found a sea shell and gave it to my 4 year old daughter and said
    “You can hear the ocean if you put this to your ear.” She put the
    shell to her ear and screamed. There was a hermit crab inside and it pinched her ear.
    She never wants to go back! LoL I know this is entirely
    off topic but I had to tell someone! https://www.maltajobs.com.mt/author/morissaloredanagdc/

  23. I think that everything composed made a great deal of sense.

    However, what about this? what if you added a little information? I
    ain’t saying your information is not solid, but suppose you added
    something that makes people want more? I mean جنگ بندی  کی لکیر پر بسنے والے عوام کا امتحان کب ختم ہوگا؟ – Mutabadil
    TV is a little vanilla. You ought to glance at Yahoo’s front page and watch how they create post titles
    to grab viewers interested. You might add a related video
    or a related pic or two to grab people interested
    about everything’ve got to say. Just my opinion, it
    could bring your website a little bit more interesting.

    https://prodottiperlacadutadeicapelli.com/de/kmax.html

  24. I loved as much as you will receive carried out right here.

    The sketch is attractive, your authored subject
    matter stylish. nonetheless, you command get bought an nervousness over that you
    wish be delivering the following. unwell unquestionably come further formerly again as exactly the same
    nearly very often inside case you shield this hike. http://izomepito-kiegeszitok-top3.com/szeretned-novelni-az-izomerosseged.html